باب اوّل :   خدا شناسی

۱۔ قادرمتعال کاوجود

۲۔ اس کی جمالی وجلالی صفات

۳۔ اس کی ذات پاک لامتناہی ہے

۴۔ وہ جسیم نہیں ہے اورہرگزدکھائی نہیں دیتا

۵۔ تمام اسلامی تعلیمات کی روح توحیدہے

۶۔ توحیدکی اقسام   (الف)  توحیدذات    (ب)  توحیدصفات                  (ج)  توحیدافعال      (د)  توحیدعبادت

۷۔ معجزات انبیاءخداکی طرف سے ہیں

۸۔ خداکے فرشتے

۹۔ عبادت خداکے لئے مخصوص ہے

۱۰۔ ذات خداوندی کی حقیقت سب پر مخفی ہے

۱۱۔ نہ نفی نہ تشبیہ

 

دوسراباب:  انبیاء الہٰی کی نبوت

۱۲۔ بعثت انبیاء کامقصد

۱۳۔ ادیان آسمانی کے پیروکاروں کے ساتھ پرامن رہن سہن

۱۴۔ انبیاء کاتاحیات معصوم ہوتا

۱۵۔ وہ خداکے مطیع بندے ہیں

۱۶۔ معجزے اورعلم غیب

۱۷۔ ابنیاء کامقام شفاعت

۱۸۔ توسل

۱۹۔ انبیاء کی دعوت کے بنیادی اصول ایک ہیں

۲۰۔ سابقہ انبیاء کی پیشگوئیاں

۲۱۔ انبیاء اورزندگی کے تمام پہلوؤں کی اصلاح

۲۲۔ قومی اورنسلی امتیازات کی نفی

۲۳۔ اسلام اورانسانی فطرت

 

تیسراباب :   قرآن اور آسمانی کتابیں

۲۴۔ آسمانی کتابوں کے نزول کافلسفہ

۲۵۔ قرآن پیغمبرکاسب سے بڑامعجزہ

۲۶۔ عدم تحریف

۲۷۔ انسان کی مادی ومعنوی ضروریات اورقرآن

۲۸۔ تلاوت ،تدبر،عمل

۲۹۔ گمراہ کن مباحث

۳۰۔ تفسیرقرآن کے اصول وضوابط

۳۱۔ تفسیربالرائے کے خطرات

۳۲۔ سنت کاسرچشمہ ،کتاب اللہ ہے

۳۳۔ آئمہ اہل بیتؑ کی سنت

 

چوتھا باب:  قیامت موت کے بعد دوسری زندگی

۳۴۔ قیامت کے بغیرزندگی نے مقصدہے

۳۵۔ قیامت کے دلائل واضح ہیں

۳۶۔ معادجسمانی

۳۷۔ موت کے بعدکی عجیب دنیا

۳۸۔ قیامت اورنامہ اعمال

۳۹۔ قیامت کے گواہ

۴۰۔ پل صراط اورمیزان اعمال

۴۱۔ قیامت کے دن شفاعت

۴۲۔عالم برزخ

۴۳۔ مادی اورمعنوی صلے

 

پانچواں باب:  امامت

۴۴۔ ہردور میں امام موجود رہاہے

۴۵۔ امامت کیاہے ؟

۴۶۔ امام گناہ اورغلطی سے معصوم ہے

۴۷۔ امام شریعت کامحافظ

۴۸۔ امام لوگوں میں سب سے زیادہ اسلام سے آگاہ ہے

۴۹۔ امام کومنصوص ہوناچاہئے

۵۰۔اماموں کاتعین ،رسول ؐ خداکے ذریعے

۵۱۔ پیغمبراکرام ؐ کے ذریعے حضرت علی ؑ کاتعین

۵۲۔ ہرامام کی تاکیداپنے بعدوالے امام کے بارے میں

۵۳۔ حضرت علی ؑ سب صحابہ سے افضل ہیں

۵۴۔ صحابہ عقل اورتاریخ کی عدالت میں

۵۵۔ اہل بیت ؑ کے علوم پیغمبرؐ سے ماخوذہیں

 

چھٹا باب:   مختلف مسائل

۵۶۔ حسن وقبح کامسئلہ

۵۷۔ عدل الٰہی

۵۸۔انسان کی آزادی

۵۹۔ فقہ کاایک مآخذعقل ہے

۶۰۔ عدل الٰہی پرایک اورنظر۔   تکیف مالایطاق   کی نفی

۶۱۔ المناک حادثات کافلسفہ

۶۲۔ کائنات کانظام سب سے بہترین نظام ہے

۶۳۔ فقہ کے چارمآخذ

۶۴۔ اجتہادکادروازہ ہمیشہ کے لئے کھلاہواہے

۶۵۔ قانون سازی کی ضرورت نہیں

۶۶۔ تقیہ اوراس کافلسفہ

۶۷۔ تقیہ کہاں حرام ہے ؟

۶۸۔ اسلامی عبادات

۶۹۔ دونمازوں کوساتھ پڑھنا

۷۰۔ خاک پرسجدہ

۷۱۔ انبیاء اورآئمہ کے مزاروں کی زیارت

۷۲۔ مراسم عزاداری کافلسفہ

۷۳۔ متعہ

۷۴۔ تاریخ تشیع

۷۵۔ شیعت کے مراکز

۷۶۔ میراث اہل بیت ؑ

۷۷۔ دوعظیم کتابیں

۷۸۔ اسلامی علوم میں شیعوں کاکردار

۷۹۔ سچائی ،صداقت اورامانت اسلام کے مہم ارکان

۸۰۔ حرف آخر

Course Curriculum

پہلا ہفتہ
ہمارے عقائد – باب اوّل : خدا شناسی 00:00:00
معروضی سوالات – ہمارے عقائد: باب اوّل 00:14:00
دوسرا ہفتہ
ہمارے عقائد – باب دوم : انبیاءؑ کی نبوت 00:00:00
معروضی سوالات – ہمارے عقائد : ا نبیاؑء کی نبوت 00:14:00
تیسرا ہفتہ
ہمارے عقائد – باب سوم : قرآن اور آسمانی کتابیں 00:00:00
معروضی سوالات – ہمارے عقائد: قرآن اور آسمانی کتابیں 00:14:00
چوتھا ہفتہ
ہمارے عقائد – باب جہارم : قیامت ،موت کے بعد دوسری زندگی 00:00:00
معروضی سوالات _ ہمارے عقائد: قیامت، موت کے بعد دوسری زندگی 00:14:00
پانچواں ہفتہ
ہمارے عقائد – درس 5 – امامت 00:00:00
معروضی سوالات – ہمارے عقائد : امامت 00:14:00

Course Reviews

N.A

ratings
  • 5 stars0
  • 4 stars0
  • 3 stars0
  • 2 stars0
  • 1 stars0

No Reviews found for this course.

top
Copyright © 2004-2017. All right Reserved Misbahudduja University